Roz

Roz aik nayee khawahish janam laiti hai…
Roz aik nayee umeed jaagata hun…
Roz sochta hun kai ab sab theek hoga…
Roz aik nayee seher dhoondata hun…
Roz sakoon ko talaash karta hun…
Roz khushi kai chand pal khojata hun…

Aur…

Roz jab wohi takleef bhare pal milte hain…
Roz jab wohi dhutkaar milti hai…
Roz jab sapne tootatey haoin…
Roz jab khawahishaat masali jaati hain…
Roz jab taareeki ko muqadar paata hun…

To…

Roz khud sai vaada karta hun…
Kai bas aur umeed mat karo…
Gar kismat mein hua to…
Subah ho gi meray naseeb ki…

Aur phir…

Roz aik nayee khawahish janam laiti hai…
Roz aik nayee umeed jaagata hun…

Posted with WordPress for BlackBerry.

Advertisements

About عمران اقبال

میں آدمی عام سا۔۔۔ اک قصہ نا تمام سا۔۔۔ نہ لہجہ بے مثال سا۔۔۔ نہ بات میں کمال سا۔۔۔ ہوں دیکھنے میں عام سا۔۔۔ اداسیوں کی شام سا۔۔۔ جیسے اک راز سا۔۔۔ خود سے بے نیاز سا۔۔۔ نہ ماہ جبینوں سے ربط ہے۔۔۔ نہ شہرتوں کا خبط سا۔۔۔ رانجھا، نا قیس ہوں انشا، نا فیض ہوں۔۔۔ میں پیکر اخلاص ہوں۔۔۔ وفا، دعا اور آس ہوں۔۔۔ میں شخص خود شناس ہوں۔۔۔ اب تم ہی کرو فیصلہ۔۔۔ میں آدمی ہوں عام سا۔۔۔ یا پھر بہت ہی “خاص” ہوں۔۔۔ عمران اقبال کی تمام پوسٹیں دیکھیں

One response to “Roz

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: