اج آکھاں وارث شاہ نوں۔۔۔

امریتا پرتم کور 31 اکتوبر 2005ء کو بھارت میں فوت ہو گئی ۔ وہ 31 اگست 1919ء کو پنجاب کے اس حصہ میں پیدا ہوئی تھی جو اب پاکستان میں شامل ہے ۔ 1947ء میں ہجرت کر کے بھارت چلی گئی تھی ۔ مندرجہ بالا نظم اس نے 1947ء کے قتل عام سے متاءثر ہو کر لکھی تھی جس نے بھارت میں اس پر تنقید کی بوچھاڑ کر دی تھی ۔ (افتخار اجمل بھوپال)

Advertisements

About عمران اقبال

میں آدمی عام سا۔۔۔ اک قصہ نا تمام سا۔۔۔ نہ لہجہ بے مثال سا۔۔۔ نہ بات میں کمال سا۔۔۔ ہوں دیکھنے میں عام سا۔۔۔ اداسیوں کی شام سا۔۔۔ جیسے اک راز سا۔۔۔ خود سے بے نیاز سا۔۔۔ نہ ماہ جبینوں سے ربط ہے۔۔۔ نہ شہرتوں کا خبط سا۔۔۔ رانجھا، نا قیس ہوں انشا، نا فیض ہوں۔۔۔ میں پیکر اخلاص ہوں۔۔۔ وفا، دعا اور آس ہوں۔۔۔ میں شخص خود شناس ہوں۔۔۔ اب تم ہی کرو فیصلہ۔۔۔ میں آدمی ہوں عام سا۔۔۔ یا پھر بہت ہی “خاص” ہوں۔۔۔ عمران اقبال کی تمام پوسٹیں دیکھیں

One response to “اج آکھاں وارث شاہ نوں۔۔۔

  • افتخار اجمل بھوپال

    امریتا پرتم کور 31 اکتوبر 2005ء کو بھارت میں فوت ہو گئی ۔ وہ 31 اگست 1919ء کو پنجاب کے اس حصہ میں پیدا ہوئی تھی جو اب پاکستان میں شامل ہے ۔ 1947ء میں ہجرت کر کے بھارت چلی گئی تھی ۔ مندرجہ بالا نظم اس نے 1947ء کے قتل عام سے متاءثر ہو کر لکھی تھی جس نے بھارت میں اس پر تنقید کی بوچھاڑ کر دی تھی ۔ اس نظم کو ميں نے امريتا کی وفات کے دو دن بعد اپنے بلاگ پر شائع کيا تھا ۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: