میرا ایک تبصرہ

حضرات، میں نے یہ تبصرہ “ایک انگریزی بلاگ” جو کہ وینا ملک اور ان کے کامران شاہد صاحب کے پروگرام کے بارے میں تحریر کردہ ہے، اس میں پوسٹ کیا تھا۔۔۔ آپ سے درخواست ہے۔۔۔ کہ آپ میرا تبصرہ تفصیلاٰ پڑھیں اور اپنی آرا سے نوازیں۔۔۔

انگریزی کے اس بلاگ ک URL  ہے۔۔۔

 http://ayesha5.wordpress.com/2011/01/22/leave-veena-malik-alone/

I havent seen the program yet… but my opinion is following:

1) No body knew Veena Malik as a person… Every one knows her an actress from Pakistan… so naturally the tag Pakistan remains with her all the time…

2) In her interviews, she always maintained that she is representing Pakistan in India…

3) Whatever she does in India, e.g drinking wine or intimidate postures with Ashmit Patel is NOT her personal attitude… it shows the world that the girls in Pakistan are open to all these kinds of bad behaviors… which obviously is not the case…

4) Yes we a hypocrate society but for how long should we continue this…. If Mohsin Khan can do it then why not Veena…? If Shoaib Malik can wed Sania Mirza then why Veena cant do whatever she is not used to do in Pakistan…? for how long on the name of hypocracy we continue to defend the wrong happening again and again… when will we stop it for once and for all…?

5) Shaitaan, as we all call the devil… helps the person to explain, negotiate, defend and communicate the evil… as was the case of Veena Malik’s defence on Kamran Shahid’s program…

Veena Malik, Meera or whoever and wherever try to impose their own Islam, culture and Nationalism should be stopped for ever to happen again… because is it helping Pakistan to rise or making any good impression all around the world?

And i say above not only for vulgar actresses… its for so called Molviz and general masses too….

Advertisements

About عمران اقبال

میں آدمی عام سا۔۔۔ اک قصہ نا تمام سا۔۔۔ نہ لہجہ بے مثال سا۔۔۔ نہ بات میں کمال سا۔۔۔ ہوں دیکھنے میں عام سا۔۔۔ اداسیوں کی شام سا۔۔۔ جیسے اک راز سا۔۔۔ خود سے بے نیاز سا۔۔۔ نہ ماہ جبینوں سے ربط ہے۔۔۔ نہ شہرتوں کا خبط سا۔۔۔ رانجھا، نا قیس ہوں انشا، نا فیض ہوں۔۔۔ میں پیکر اخلاص ہوں۔۔۔ وفا، دعا اور آس ہوں۔۔۔ میں شخص خود شناس ہوں۔۔۔ اب تم ہی کرو فیصلہ۔۔۔ میں آدمی ہوں عام سا۔۔۔ یا پھر بہت ہی “خاص” ہوں۔۔۔ عمران اقبال کی تمام پوسٹیں دیکھیں

3 responses to “میرا ایک تبصرہ

  • جاوید گوندل ۔ بآرسیلونا ، اسپین

    عمران اقبال بھائی!

    اللہ آپ کو جزائے خیر دے۔آمین

    حیرانگی ہوتی ہے کہ اسلامی اور پاکستانی اقدار کی پامالی کرنے والے کنجر بھی پاکستان کے عام مسلمانوں کو منافقت کا طعنہ دینے لگے ہیں۔ جبکہ اپنے آپ کو پاکستانی کہلا کر اور پوری قوم کی غلط تصویر پیش کرکے اپنے غلط کو جائز کہنے والی ایک بے حیا جو کہ خود منافقت سے کام لے رہی ہے ناجائز کو جائز ثابت کرنا چاہتی ہے۔

    بے حیا حرکات کو پاکستان کی نمائندگی قرار دینے پہ تو اس پہ مقدمہ کیاجان چاہئیے تانکہ یا تو وہ ایسی حرکات کرنے پہ اسے پاکستان نمائندگی سے براءت کرے اور پوری قوم سے معافی مانگے۔ یا پھر تادیبی کاروائی کا سامنا کرے۔ اسطرح باقی مادر پدر آزاد خیالوں کو پاکستان یا پاکستانی قوم کے نام کو اپنے رزیل مقاصد کے لئیے استعمال کرنے کی جرائت نہ پڑے۔

  • جاوید گوندل ۔ بآرسیلونا ، اسپین

    میں نے کامران شاہد کا وہ پروگرام تو نہیں دیکھا مگر انگریزی بلاگر کی تحریر کو پڑھا ہے۔ جس کے مطابق پاکستان میں خواتین کے ساتھ ہونے والے دیگر سنگین جرائم اور ظلم و ستم پہ مفتی صاحب پہ وینا ملک یہ کہہ رہی ہے کہ اس وقت مفتی صاحب کی طرف سے کوئی فتوٰی وغیرہ کیوں نہیں آتا ۔۔ وغیرہ۔ وغیرہ ۔ اور اسی بات پہ بلاگر نے بھی اپنی تحریر سمیٹی ہے۔ تو کیا پاکستان میں وحشیت اور درندگی کرنے والے کچھ جانوروں پہ مفتی صاحب کا کوئی فتوی یا بیان نہ آنے کی صورت میں وینا ملک کو باقی سب جو وہ کرتی پھری ہے۔ اسکا جواز مل جاتا ہے؟ کیا دو ناجائز کام مل کر جائز کام کے برابر ہوجاتے ہیں؟ کیا کسی ایک کے ناجائز کام انجام دینے سے دوسرے کسی کا ناجائز کام درست تسلیم کیا جائے؟

    بات مفتی صاحب اور وینا ملک کے آرگومنٹس یا دلائل کی نہیں۔ بلکہ جیسا کہ بیان کیا جاتا ہے کہ وینا ملک نے انتہائی قابل اعتراض اور فحش حرکات کیں ہیں۔ اور ایک عالم نے اسے دیکھا ہے ۔ اور پھر اس پہ ہی بس نہیں بلکہ اسے پاکستانیت کے ساتھ نتھی کر دیا ہے۔

    میری نظر میں یہ پورے پاکستان کی خواتین کی توہین ہے۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: