لائق لیکن غریب طالبعلم

اس تصویر کے بارے میں آپکا کیا خیال ہے۔۔۔ ؟

68153_124229054299661_100001377013379_114601_3640752_n

نوید آصف الحمرا ہال لاہور کے اس جلسے میں کوئی سیٹ نہ ملنے پر سیڑھیوں پر بیٹھا تھا۔جس میں اسے گولڈ میڈل ملنا تھا۔ اس نے لاہور بورڈ کے امتحان میں پورے نو سو انیس نمبر حاصل کرکے دوسری پوزیشن حاصل کی تھی۔دوسری پوزیشن حاصل کرنے والا طالب علم اوکاڑہ کے گاﺅں ناریوال سے تھا۔اس کا اسکول اس کے گھر سے سات کلو میٹر دور تھا۔ جہاں وہ روزانہ پیدل جاتا تھا۔اس جلسے میں آنے سے پہلے وہ شام کو اپنی ماں کے پاس بیٹھا تھا۔ کہ لاہور میٹرک بورڈ کے اہلکاروں کی ایک ٹیم اسے دھونڈتی ہوئی اس کے گاﺅں پہنچی۔ نوید اقبال اور اس کی ماں ان کی آمد کی خبر پا کر ڈر سے گئے۔ چند دن پہلے ان کی بھینس چوری ہوگئی تھی۔چوری کے اس واقعے سے وہ دلبرداشتہ تھے۔پھر انھیں خوشخبری سنائی گئی کہ نوید اقبال لاہور میٹرک بورڈ کے امتحان میں دوسرے نمبر پر آیا ہے۔ اور کل وزیر اعلی پنجاب اسے ایک تقریب میں گولڈ میڈل دیں گے۔نوید اقبال لاہور الحمرا پہنچ گیا۔ لیکن اس جلسہ گاہ میں جہاں اس کی اعلی کارکردگی کو سراہا جانا تھا، اس کے لئے کوئی نششت خالی نہ تھی۔وہ جلسہ گاہ کی سیڑھیوں پر بیٹھ گیا۔پھر جب اس کا نام پکارا گیا تو پتہ چلا کہ یہ تو وہ طالب علم ہے جس نے گولڈ میڈل حاصل کیا ہے۔اسپنچ کی چپل پہن کر اس نے گولڈ میڈل حاصل کیا

Advertisements

About عمران اقبال

میں آدمی عام سا۔۔۔ اک قصہ نا تمام سا۔۔۔ نہ لہجہ بے مثال سا۔۔۔ نہ بات میں کمال سا۔۔۔ ہوں دیکھنے میں عام سا۔۔۔ اداسیوں کی شام سا۔۔۔ جیسے اک راز سا۔۔۔ خود سے بے نیاز سا۔۔۔ نہ ماہ جبینوں سے ربط ہے۔۔۔ نہ شہرتوں کا خبط سا۔۔۔ رانجھا، نا قیس ہوں انشا، نا فیض ہوں۔۔۔ میں پیکر اخلاص ہوں۔۔۔ وفا، دعا اور آس ہوں۔۔۔ میں شخص خود شناس ہوں۔۔۔ اب تم ہی کرو فیصلہ۔۔۔ میں آدمی ہوں عام سا۔۔۔ یا پھر بہت ہی “خاص” ہوں۔۔۔ عمران اقبال کی تمام پوسٹیں دیکھیں

15 responses to “لائق لیکن غریب طالبعلم

  • میرا پاکستان

    یہ تصویر پاکستان میں حکمرانوں کی نظر میں تعلیم کی ناقدری ظاہر کرتی ہے کیونکہ انہیں معلوم ہے جس دن عوام پڑھ لکھ گئی اس دن وہ کرپشن نہیں کر سکیں گے۔

  • سید شاہ رُخ کمال

    غربت انسان کو اُس کے موجودہ حال پر کبھی نہیں چھوڑتی۔ غربت یا تو انسان کو تعلیم کی ضرورت کا احساس دلا کا کامیاب انسان بنا دیتی ہے یا پھر شیطان کے ہاتھوں میں چھوڑ دیتی ہے۔ ان دونوں حالتوں کی ذمہ دار صرف انسان کی تربیت اور ماحول ہوتی ہیں۔ اگر تو نوید آصف جیسے فرزند نے کسی قابل ماں سے تربیت حاصل کی ہو تو کامیاب ہو جاتا ہے اور اگر کسی غریب کے بچہ غلط تربیت میں پلے تو غربت اُسے شیطانی راستوں پر چلا دیتی ہے۔

    • عمران اقبال

      شاہ رخ صاحب۔۔۔ آپ نے درست فرمایا۔۔۔

      اچھائی اور برائی کا معیار واقعی اب دولت اور غربت میں فرق ہی رہ گیا ہے۔۔۔ اس بچے کی کامیابی کے پیچھے اس کی محنت سے زیادہ اس کے والدین کی محنت ہے۔۔۔ جنہوں نے اسے بھٹکنے نہیں دیا۔۔۔ اور گھر میں ایسا ماحول بنایا جس میں اس بچے کو پڑھنے کا شوق پیدا ہوا۔۔۔

      اب غربت چوریاں، ڈاکے اور قتل و غارت بھی کرواتی ہے اور غربت ایمانداری سے ترقی اور کامیابی کا راستہ بھی دکھاتی ہے۔۔۔ ہر عمل کا دارومدار نیت پر ہے۔۔۔ اور نیت اور تربیت اچھی ہو تو شیطان کا کام زرہ مشکل ہو جاتا ہے۔۔۔

      آپ کے تبصرے کا بہت شکریہ

  • مکی

    جسے سر پہ بٹھانا چاہیے اسے سیڑھیوں پہ بٹھا رکھا ہے..

  • Tweets that mention لائق لیکن غریب طالبعلم « دائرہ فکر… عمران اقبال -- Topsy.com

    […] This post was mentioned on Twitter by UrduFeed, Imran Iqbal. Imran Iqbal said: لائق لیکن غریب طالبعلم: http://wp.me/p12iX2-4V […]

  • عمران اقبال

    اس تصویر سے منسلک واحد مثبت بات یہ ہے کہ خادم اعلیٰ شہباز شریف نے جب نوید آصف کو سیڑھیوں پر بیٹھے دیکھا تو اسے اپنی نشست آفر کر دی کیونکہ باقی بڑے لوگوں کو عقل نہیں تھی۔۔۔ اور وہ اپنے آپ کو نوید آصف سے زیادہ اہم سمجھ رہے تھے۔۔۔

  • تانیہ رحمان

    ہمارے حکمرانوں کو ایسے بچوں کو خاص اہمیت دیتے ہوئے اعلی تعیلم دلاانی چاہیے ۔۔۔ جو ان کا حق ہے ۔۔یہاں کم از کم اس کا میڈل کسی اور کو نہیں دیا گیا ۔اور اس بچارے کے ہاتھ چند ہزار روپے ۔
    اپنی شاعری دیکھ کر خوشی ہوئی ۔ ۔
    میں ہاں کمی کمین اے ربا میرئ کی اوقات
    اچا تیرا نام ہے رب اچی تیری ذات
    بہت شکریہ

  • عمران اقبال

    تانیہ رحمان صاحبہ۔۔۔ السلام علیکم۔۔۔ آپ کے تبصرے کا بہت شکریہ۔۔۔ اور پھر معذرت کہ میں نے آپ سے پوچھے بغیر ہی آپکی شاعری اپنے بلاگ میں استعمال کر لی۔۔۔ اور پھر کہیں آپ کا ریفرنس بھی نہیں دیا۔۔۔ عجب خود غرضی سمجھ لیں یا بھولنے کی عادت۔۔۔ میں واقعی شرمندہ ہوں۔۔۔

    دراصل اس پوری نظم کا ایک ایک حرف میرے دل میں اس قدر اتر چکا ہے اور میں اس کو اتنی بار پڑھ چکا ہوں کہ اب زبانی یاد ہو گئی ہے۔۔۔ جب پہلی بار یہ پڑھی تھی تو ایسا محسوس ہوا کہ واقعی بلھے شاہ یا کسی عارف شاعر نے لکھی ہے لیکن آج دوبارہ آپ کے بلاگ پر جب پڑھی تو حقیقت سے آشنا ہوا کہ یہ نظم آپ نے لکھی ہے۔۔۔ میں واقعی شرمندہ ہوں کہ جذبات میں "کاپی رائٹ” کا بھی خیال نہیں رکھ پایا۔۔۔ امید ہے آپ کو واقعی برا نہیں لگا اور آپ اسے میرے بلاگ میں رکھنے کی اجازت دیں گی۔۔۔ ورنہ میں آپ کے حکم کا منتظر ہوں کہ اسے بلاگ سے مٹا دوں۔۔۔ لیکن یاد رکھیے گا کہ بلاگ سے تو مٹ جائے گی لیکن دماغ سے نہیں مٹا پاوں گا۔۔۔ یہ نظم ایک ماسٹرپیس ہے۔۔۔ اور میں واقعی بہت باذوق ثابت ہوا ہوں۔۔۔ اللہ آپ کو جزائے خیر عطا فرمائے۔۔۔ آمین۔۔۔

  • حرا قریشی

    پاکستان کو ایسے ہی لوگوں کی ضرورت ہے جن میں محنت کا جزبہ موجود ہو۔ اور وہ صرف باتیں بنانے کے بجائے کچھ مثبت کرکے دکھائیں۔
    پتا نہیں ایسے کتنے ہی لوگ موجود ہوں گے جو بہت محنت کرکے پڑھ بھی لیتے ہیں تو میڈل تو دور کی بات ان کا کہیں ذکر تک نہیں ہوتا۔ ہاں انڈین موویز اور ایکٹرز کی ہر خبر ہیڈ لائن نیوز بناکر ضرور دکھائی جاتی ہے۔

  • افتخار اجمل بھوپال

    اگر امتحان کا نام اور اس بچے کے سکول کا نام بھی معلوم ہو جاتا تو بہتر تھا

  • تانیہ رحمان

    عمران اللہ پاک آپ کا اقبال بلند کرئے ۔۔۔ میرا مقصد یہ ہرگز نہیں ہے کہ آپ نے کیوں لگائی ۔ مجھے خوشی ہوئی ۔۔۔ جب لکھتی تھی۔۔۔۔ تب سے لے کر آج تک یہ مجھے خود بہت اچھی لگتی ہے ۔ میں اس کے بعد نہیں لکھ پائی ۔۔ بابا بلھے شاہ میرے پسندیدہ صوفی شاعر ہیں ۔۔۔ جب میرے والد صاحب نے میری یہ شاعری پسند کی تو آپ سمجھ لیں کہ اس کے بعد کچھ بھی کہنے کو باقی نہیں بچا ۔۔۔۔ حضرت بابا بلھے شاہ کے کلام کی سب سے بڑی خوبی جو ان کو سب سے الگ رکھتی ہے ۔ وہ اپنی ذات سے نکل کر بات کرتے ہیں ۔۔۔میں میں نہیں بس وہی وہی ہوتا ہے ۔

  • عمران اقبال

    نوید آصف الحمرا ہال لاہور کے اس جلسے میں کوئی سیٹ نہ ملنے پر سیڑھیوں پر بیٹھا تھا۔جس میں اسے گولڈ میڈل ملنا تھا۔ اس نے لاہور بورڈ کے امتحان میں پورے نو سو انیس نمبر حاصل کرکے دوسری پوزیشن حاصل کی تھی۔دوسری پوزیشن حاصل کرنے والا طالب علم اوکاڑہ کے گاﺅں ناریوال سے تھا۔اس کا اسکول اس کے گھر سے سات کلو میٹر دور تھا۔ جہاں وہ روزانہ پیدل جاتا تھا۔اس جلسے میں آنے سے پہلے وہ شام کو اپنی ماں کے پاس بیٹھا تھا۔ کہ لاہور میٹرک بورڈ کے اہلکاروں کی ایک ٹیم اسے دھونڈتی ہوئی اس کے گاﺅں پہنچی۔ نوید اقبال اور اس کی ماں ان کی آمد کی خبر پا کر ڈر سے گئے۔ چند دن پہلے ان کی بھینس چوری ہوگئی تھی۔چوری کے اس واقعے سے وہ دلبرداشتہ تھے۔پھر انھیں خوشخبری سنائی گئی کہ نوید اقبال لاہور میٹرک بورڈ کے امتحان میں دوسرے نمبر پر آیا ہے۔ اور کل وزیر اعلی پنجاب اسے ایک تقریب میں گولڈ میڈل دیں گے۔نوید اقبال لاہور الحمرا پہنچ گیا۔ لیکن اس جلسہ گاہ میں جہاں اس کی اعلی کارکردگی کو سراہا جانا تھا، اس کے لئے کوئی نششت خالی نہ تھی۔وہ جلسہ گاہ کی سیڑھیوں پر بیٹھ گیا۔پھر جب اس کا نام پکارا گیا تو پتہ چلا کہ یہ تو وہ طالب علم ہے جس نے گولڈ میڈل حاصل کیا ہے۔اسپنچ کی چپل پہن کر اس نے گولڈ میڈل حاصل کیا۔۔۔

  • جاوید گوندل ۔ بآرسیلونا ، اسپین

    ابھی کا ایک واقعہ ہے۔ دور دراز کے علاقے کا رہنے والا سفید پوش اور غیور ماں باپ کا پہلا بیٹا اور چار پانچ بہن بھائیوں کا سب سے بڑا بھائی لاہور میں ایک انجنرئنگ میں ہر سال پوزیشن لیتا رہا ہے۔ وزیر اءلی پنجاب کی ایماء پہ حکومت کی طرف سے دیگر طالبعلموں سمیت اسے انجئرنگ کے پہلے سال سے وطیفہ دئیے جانے کا اعلان سے کیا جاتا ہے۔ وہ بچہ متواتر سھبی متعلقہ اداروں کی خاک چھانتا ہے اس کے منظور کئے گئے وطیفے کی رقم سے اسے ایک پائی بھی نہیں ملتی حتٰی کہ وہ اپنے سفید اور غیور ماں باپ کی دعاؤں اور تعلیمی اخراجات جیسے تیسے پورے کرنے کی بدولت پنجاب بھر میں امتیازی نمبروں سے انجنرئنگ کی تعلیم مکمل کر لیتا ہے ۔ وزیر اعلٰی پنجاب بہ نفس نفیس دیگر کے ساتھ اسے بھی شرف ملاقات بخشتے ہیں۔ انعام وکرام کا اعلان ہوتا ہے۔ وہی منظور شدہ وظیفہ کا امیدوار اور امتیازی ہوزیشن لینے والا انعام اکرام کے اعلانات کے بعد ایک بار پھر سے مایوس و دل گرفتہ اپنے آبائی علاقے کو لوٹ جاتا ہے اسے پھر سے ایک پھوٹی کوڑی ادا نہیں کی گئی ۔ اور روزگار کی تلاش میں جوتیاں چٹخا رہا ہے۔

    آپ اسے کیا کہیں گے؟۔ اسطرح کے اعلانات ہوتے ہیں اور پاکستانی سیاستدان ایسے اعلانات کے بعد ان پہ عمل درآمد سے بے خبر ہوجاتے ہیں۔ چیک ملتے ہیں مگر کئیش نہیں ہوتے۔

  • حجاب

    عمران شہباز شریف ہوں یا کوئی اور سیاست دان غریب معصوم عوام کے دل میں جگہ بنانے کے لیئے اتنا تو کرتے ہیں ، اب شہباز شریف کا ایک ووٹ تو پکا ہوا ۔۔ ورنہ تو گولڈ میڈل دے دیا ، گولڈ مہنگا ہے جب تک اس سے کام چل سکے چلائے غریب طالب علم ، آگے کی پرواہ اگر کی تو وہ پاکستانی سیاست تو نہ ہوئی ۔۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: