میرا غم یا ان کا دکھ ۔۔۔؟

میرا غم

علیزہ کی پیشانی پریشان کن حد تک گرم ہو گئی تھی۔۔۔ میری بچی آہستہ آہستہ نڈھال ہوتی جا رہی تھی۔۔۔ ہروقت کی چنچل گڑیاکے منہ سے کچھ لفظ ہی نہیں نکل پا رہا تھا۔۔۔ یہاں تک کہ شاید اس میں رونے کی ہمت نہیں تھی۔۔۔ میں نے رات کو اس کا بخار دوبارہ چیک کرنے کے لیے اس کے جلتے ہوئے ماتھے پر اپنا ہاتھ رکھا تو میری پریشانی میں مزید اضافہ ہو گیا۔۔۔ دو دن پہلے ڈاکٹر کو چیک کروایا تھا۔۔۔ ڈاکٹر نے “بکٹیریل انفیکشن” (bacterial infection) کی تشخیص کی اور کچھ دوایاں لکھ کر دیں۔۔۔ اب دو دن کے دوا کی بعد بھی علیزہ کو کوئی افاقہ نہیں تھا۔۔۔ میں نے علیزہ کو اپنی گود میں بھرا۔۔۔ اور بیگم کو کہا کہ جلدی سے علیزہ کا بیگ تیار کرے اور میرے ساتھ ہسپتال چلے۔۔۔

دس منٹ بعد میں جی ایم سی ہسپتال(Gulf Medical College and Hospital)کی طرف گاڑی بھگا رہا تھا۔۔۔ ڈرائیو کرتے کرتے علیزہ کو دیکھتا تو اس کا مرجھایا ہوا چہرا دیکھ کر کلیجہ منہ میں آنے لگتا۔۔۔ مجھے بس ہسپتال پہنچنے کی جلدی تھی۔۔۔ بیس منٹ کی ڈرائیو کے بعد میں جی ایم سی پہنچا اور علیزہ کو گود میں لے کر ایمرجنسی کی طرف بھاگا۔۔۔  بیگم کو علیزہ کی فائل بنوانے کو کہا اور خود وہاں موجود اسٹاف کو علیزہ کی بیماری کا بتانے لگا۔۔۔ مجھے ٹریٹمنٹ روم کی طرف بھیج دیا گیا۔۔۔ شفٹ ڈاکٹر نے علیزہ کی بخار چیک کیا جو 103 ڈگری سے اوپر تھا۔۔۔ اس نے بلڈ ٹیسٹ اور سینے کا ایکسرے کروانے کو کہا۔۔۔ یہ ٹیسٹ کروانا بہت مشکل تھا کہ علیزہ کو سنبھالنا بہت دشوار کام ہے۔۔۔

خیر، میں نے علیزہ کی ٹانگیں اور بیگم نے علیزہ کے بازو مضبوطی سے پکڑے اور نرس نے اس کے ہاتھ سے دو انجیکشن خون کے لے لیے۔۔۔ اس دوران علیزہ تکلیف سے زور زور سے رو رہی تھی۔۔۔ کبھی اپنی ماں کو دیکھتی اور کبھی مجھے کہ اسے سوئی کے درد سے بچائیں۔۔۔ بیگم کی آنکھوں میں بھی آنسو آ گئے ۔۔۔ جیسے ہی نرس نے خون لیا۔۔۔ میں نے علیزہ کو اپنے سینے سے لگا لیا۔۔۔ اور ایکسرے روم کی طرف بڑھ گئے۔۔۔ ایکسرے لینے کا سارا عمل ویسا ہی کربناک تھا۔۔۔ علیزہ تکلیف اور بے بسی سے رو رہی تھی۔۔۔ اور اپنی بیٹی کی بے بسی دیکھ کر میں بھی خود کو بے بس محسوس کر رہا تھا۔۔۔ نا چاہتے ہوئے بھی میرے آنسو نکل آئے۔۔۔

ایکسرے روم سے باہر آ کر میں باہر رکھی کرسی پر بیٹھ گیا۔۔۔ اور  اپنے دونوں ہاتھوں سے اپنا چہرا چھپا کر زار وقطار رونے لگا۔۔۔ مجھ سے اپنی بیٹی کی تکلیف برداشت نہیں ہو پا رہی تھی۔۔۔ مجھے ایسا لگا جیسے میری بیٹی کو میرے گناہوں کی سزا مل رہی ہو۔۔۔ روتے روتےمیں اللہ سے اپنی بیٹی کی صحت کی دعائیں کرتا رہا۔۔۔ اپنے گناہوں کی معافی مانگتا رہا۔۔۔ آنسو تھم ہی نہیں رہے تھا۔۔۔ جانے کب تک روتا رہا۔۔۔

ڈاکٹر نے رزلٹ چیک کیے اور کچھ اضافہ کے ساتھ پہلے والی ادویات جاری رکھنے کو کہا۔۔۔ گھر آنے تک علیزہ کافی بہتر محسوس کر رہی تھی۔۔۔آتے ہی دادا دادی سے لپٹ کر کھیلنے لگی۔۔۔

اب دو دن سے علیزہ ماشاءاللہ کافی بہترہے۔۔۔ دوائیں تو اب بھی جاری ہیں۔۔۔ کافی کمزور ہو گئی ہے۔۔۔ لیکن آہستہ آہستہ پھر سے وہی شرارتی علیزہ واپس آ رہی ہے۔۔۔

ان کا دکھ

  پھر کچھ خبریں نظر سے گزریں۔۔۔ تو یہ احساس ہوا کہ میرا اور میری بیٹی کی تکلیف ان کے سامنے تو کچھ بھی نہیں تھی۔۔۔ ان والدین پر کیا گزری ہوگی۔۔۔ ان کا کیا قصور ہے جو یہ وقت دیکھنا پڑا ۔۔۔ آخر کیا ہے یہ “معاشرہ”۔۔۔؟ آخر ہم اتنے بے حس کیوں ہو گئے ہیں۔۔۔ آخرت کو کیوں بھول گئے ہیں۔۔۔؟

news

1101206258-1

1101206890-1

 

Advertisements

About عمران اقبال

میں آدمی عام سا۔۔۔ اک قصہ نا تمام سا۔۔۔ نہ لہجہ بے مثال سا۔۔۔ نہ بات میں کمال سا۔۔۔ ہوں دیکھنے میں عام سا۔۔۔ اداسیوں کی شام سا۔۔۔ جیسے اک راز سا۔۔۔ خود سے بے نیاز سا۔۔۔ نہ ماہ جبینوں سے ربط ہے۔۔۔ نہ شہرتوں کا خبط سا۔۔۔ رانجھا، نا قیس ہوں انشا، نا فیض ہوں۔۔۔ میں پیکر اخلاص ہوں۔۔۔ وفا، دعا اور آس ہوں۔۔۔ میں شخص خود شناس ہوں۔۔۔ اب تم ہی کرو فیصلہ۔۔۔ میں آدمی ہوں عام سا۔۔۔ یا پھر بہت ہی “خاص” ہوں۔۔۔ عمران اقبال کی تمام پوسٹیں دیکھیں

16 responses to “میرا غم یا ان کا دکھ ۔۔۔؟

  • UncleTom

    > اللہ تعالیٰ علیزہ کو شفاء کامل عطا فرمائین اور اسکو جسمانی اور روحانی بیماروں سے محفوظ رکھیں۔

  • جاوید گوندل ۔ بآرسیلونا ، اسپین

    > اللہ رحم کرے۔ پاکستان میں ہر وہ خرابی جو ماضی کی ان قوموں میں تھی جن کا ذکر قرآن کریم میں ایا ہے ۔ وہ خرابیاں ایک ہی وقت میں سبھی کی سبھی ہماری ایک ہی قوم میں پائی جاتی ہیں۔ تو سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کیا اللہ تعالٰی ہم پہ محض اسلئیے رحم کر دے گا، کہ ہم نیکی نامی کی کوئی شئے باقی نہیں بچی اور بدی کی ہر ترغیب پہ ہم فورا تیار ملتے ہیں؟

  • fikrepakistan

    > عمران بھائی بہت افسوس ہوا علیزہ کے تکلیف کا پڑھہ کے۔ اللہ بیٹی کو جلد سے جلد مکمل صحت کاملا و آجلا عطاء فرمائیں آمین۔ ڈاکٹر بنتے وقت تمام اسٹوڈنٹس سے ایک حلف لیا جاتا ہے کاش یہ ہڑتال کرنے والے اپنے اس لئے ہوئے حلف کو ہی یاد کرلیں۔

  • یاسر خوامخواہ جاپانی

    > اللہ علیزہ کو صحت عطا فرمائے۔آمین۔

  • تانیہ رحمان

    font> عمران اپنی تکلیف برداشت ہو جاتی ہے لیکن اپنے بچوں کی زرا سی تکلیف کو برداشت کرنا بہت مشکل ہے ۔۔۔ ملک میں کتنے بچے روز مرتے ہیں ۔۔ خوراک نا ہونے کی وجہ سے ۔ تعلیم کی بات تو بععد کی ہے ۔۔۔ علاج کا کوئی بندوبست نہیں ہے ۔ غریب کے بچے کا تو انسانوں مین شمار نہیں ہوتا ۔۔۔ اس سے تو ہمارے لیڈران کے پالتو جانور اچھے ہیں ۔ جو آے سی میں تو رہتے ہیں ۔۔۔ کبھی تو دل کرتا ہے اللہ پاک سے دعا کروں ۔ کہ ان کو بھی پالتو جانور بنا دے ۔ لیکن پھر نا امیدی کا احساس پیدا ہونے لگتا ہے ۔ کہ جب بنایا ہے تو رکھوالی بھی وہی کرئے گا ۔۔۔۔

  • بلاامتیاز

    font> اللہ گڑیا کو صحت اور تندرستی دے۔
    بس گڑیا کا صدقہ دیا کریں کسی قریبی غریب بچی کے علاج کی صورت۔۔

  • افتخار اجمل بھوپال

    font> اللہ بچی کو جلد صحت کاملہ عطا فرمائے

  • Darvesh Khurasani

    font> اللہ تعالٰی آپکے بچی کو صحت کاملہ عطا فرمائے ۔ زندگی تکالیف اور ازمائیشوں کا نام ہے ۔ گھبرانا نہیں چاہئے۔

    لیکن پاکستان کے حالات کو دیکھ کر دل خون کے آنسو روتا ہے۔۔ اخبار دیکھتے وقت مزاحیہ خبریں وغیرہ کو دیکھتا ہوں لیکن خطرناک اور قتل وقتال کے خبروں کو ہاتھ تک نہیں لگاتا۔

  • عادل بھیا

    font> اللہ آپکی بچی سمیت تمام بیماروں کو صحت کاملہ عطا فرمائے اور ہم سب کو بیماریوں سے بچائے رکھے۔ امتیاز بھیا نے دُرست کہا کہ بچی کا صدقہ دیں۔
    باقی حالات کو دیکھ کر کُچھ کہنے کو نہیں ہے۔۔۔ یہاں شروع سے ہی یہی حال ہے۔ اللہ ہمارے حالوں پر رحم فرمائے۔

  • عمران اقبال

    font>
    بھائی انکل ٹام: علیزہ کے لیے دعا کا بہت بہت شکریہ۔۔۔ اللہ آپ کو جزائے خیر دے۔۔۔ آمین۔۔۔۔
    جاوید گوندل بھائی: درست فرمایا آپ نے۔۔۔ میں بھی اکثر یہی سوچتا ہوں کہ کونسا ایسا گناہ ہے جو اب ہم نہیں کر رہے۔۔۔ اور وہ گناہ جن کے سرذد ہونے پر اللہ تبارک تعالیٰ نے قوموں کے نام و نشان مٹا دیے۔۔۔ ہم تو صرف رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے دعاووں کے طفیل اب تک سور اور بندر نہیں بنے۔۔۔ ورنہ کرتوتیں تو ہماری ان سے بھی گھٹیا ہیں۔۔۔
    فکر پاکستان بھائی: ہمیشہ کی طرح آپ کی دعاووں کا بہت شکریہ۔۔۔ ہمارے ہاں تو وزرا، جج صاحبان اور پولیس والے اپنے حلف کو پامال کر دیتے ہیں تو ڈاکٹر کہاں پیچھے رہتے۔۔۔ یہ تصویر ہمارے معاشرے کے مردہ ہونے کی زندہ تصویر ہے۔۔
    یاسر بھائی: علیزہ کی صحت یابی کی دعاووں کے لیے بہت بہت شکریہ۔۔۔ اللہ آپ کو اور آپ کے اہل خانہ کو ہمیشہ خوش رکھے۔۔۔ آمین۔۔۔
    تانیہ آپا: باپ بننے کے بعد اندازہ ہوا کہ ہمارے ماں باپ نے ہمیں کن مشکلات کے ساتھ پالا ہے۔۔۔ علیزہ کا تکلیف سے بہا ایک ایک آنسو میرے کلیجے کے جانے کتنے ٹکڑے کر دیتا ہے۔۔۔
    امیتاز بھائی۔۔۔ آپ کے مشورے پر عمل کروں گا۔۔۔ دعاووں کے لیے بہت شکر گزار ہوں۔۔۔ آپ جب بھی میرے بلاگ پر آتے ہیں۔۔۔ مجھے ہمیشہ اچھا اور بہترین مشورہ اور رائے دیتے ہیں۔۔۔ اللہ آپ کو جزا عطا فرمائے۔۔۔ آمین۔۔۔
    افتخار انکل: آنٹی سے درخواست کیجیے گا کہ وہ بھی ہمیں اپنے دعاووں میں یاد رکھیں۔۔۔ بہت بہت شکریہ۔۔۔
    درویش خراسانی صاحب: بلاگ پر آپ کو خوش آمدید کہتا ہوں اور امید کرتا ہوں کہ آپ اپنے مفید تبصروں اور رائے سے ایسے ہی نوازتے رہیں گے۔۔۔
    پاکستان کے حالات دیکھ کر واقعی بہت رونا آتا ہے۔۔۔ اللہ ہمارے ملک پر رحم فرمائے۔۔۔ آمین۔۔۔
    عادل بھیا۔۔۔ دعا کے لیے بہت شکریہ۔۔۔ اپنی ارآء اور تبصروں سے نوازتے رہیں۔۔۔

  • شاہدہ اکرم

    font> عِمران بھائ پیاری بیٹی علیزے کو میرا بہُت بہُت پیار دینا اللہ تعالیٰ ماں باپ کو اولاد کی کوئ آزمائِش نا دِکھائے شُکر ہے کہ اب علیزہ بہتر ہے بچے سبھی برابر ہوتے ہیں معصُوم اور نازُک لیکِن جب کسی بھی بچے پر ایسی کوئ تکلیف آتی ہے تو دِل تڑپ جاتا ہے کاش کہ ہمارے مُلک میں بھی سہُولتوں کی فراوانی ہو جائے اور کِسی بھی ماں یا باپ کو اولاد کا دُکھ نا دیکھنا پڑے،،،آمین

    • عمران اقبال

      font> شاہدہ آپا۔۔۔ آپ کا پیار علیزے تک پہنچا دیا ہے۔۔۔ بہت بہت شکریہ۔۔۔

      font> اتنی دعائیں ملی ہیں علیزہ کو۔۔۔ کہ ماشاءاللہ آج کافی چاک و چوبند ہے۔۔۔

      آپ نے بلکل درست فرمایا کہ اولاد کی تکلیف ماں باپ کے لیے برداشت کرنا بہت مشکل کام ہے۔۔۔ اللہ سب والدین کو ان کی اولاد کی خوشیاں دکھائے۔۔۔ آمین۔۔۔

  • Dr.Jawwad Khan

    font> جب تک آدمی باپ نہیں بنتا اولاد کا درد نہیں سمجھ سکتا …الله سب والدین کو اولاد کی تکلیف دیکھنے سے بچاۓ.

  • hijabeshab

    font> اللہ علیزہ کو جلد صحت دے ہنستی مسکراتی رہے ہمیشہ آمین ۔۔

  • عمران اقبال

    font> @ ڈاکٹر جواد صاحب۔۔۔ تبصرے کے لیے بہت شکریہ۔۔۔

    @ حجاب۔۔۔ دعا کے لیے بہت شکریہ۔۔۔
    اللہ آپ کو بھی اچھی صحت عطا فرمائے۔۔۔ اور ہمیشہ خوش رکھے۔۔۔ آمین۔۔۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: