ہماری تحریریں آنے والی نسلوں کی امانت ہیں! (via گیلی دھوپ)

حدیث شریف ہے کہ، عالم کے قلم کی روشنائی شہید کے خون سے زیادہ مقدس ہے۔ ایک بار تانیہ رحمان صاحبہ نے بلاگرز سے ایک سوال کیا تھا کے، آپ بلاگ کیوں لکھتے ہیں؟ تقریباَ سب نے ہی بلاگ لکھنے کی وجہ بیان کی تھی، میں نے اس وقت بھی یہ ہی لکھا تھا کہ میں بلاگ کو سیکھنے سکھانے کا زریعہ سمجھتا ہوں۔ میرا ایسا ماننا ہے کے لکھنے کا کوئی بھی ایسا زریعہ جس سے آپ اپنی تحریر سپرد زد عام کر رہے ہوتے ہیں وہ قوم کی امانت ہوتی ہے وطن کی امانت ہوتی ہے وطن میں رہنے والے لوگ … Read More

via گیلی دھوپ

Advertisements

About عمران اقبال

میں آدمی عام سا۔۔۔ اک قصہ نا تمام سا۔۔۔ نہ لہجہ بے مثال سا۔۔۔ نہ بات میں کمال سا۔۔۔ ہوں دیکھنے میں عام سا۔۔۔ اداسیوں کی شام سا۔۔۔ جیسے اک راز سا۔۔۔ خود سے بے نیاز سا۔۔۔ نہ ماہ جبینوں سے ربط ہے۔۔۔ نہ شہرتوں کا خبط سا۔۔۔ رانجھا، نا قیس ہوں انشا، نا فیض ہوں۔۔۔ میں پیکر اخلاص ہوں۔۔۔ وفا، دعا اور آس ہوں۔۔۔ میں شخص خود شناس ہوں۔۔۔ اب تم ہی کرو فیصلہ۔۔۔ میں آدمی ہوں عام سا۔۔۔ یا پھر بہت ہی “خاص” ہوں۔۔۔ عمران اقبال کی تمام پوسٹیں دیکھیں

One response to “ہماری تحریریں آنے والی نسلوں کی امانت ہیں! (via گیلی دھوپ)

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: